پانی کے ذریعے18سے20ہزارمیگاواٹ بجلی حاصل کرنے کااعلان

تازہ خبر
13
0
sample-ad

اسلام آباد:وفاقی وزیر برائے توانائی عمر ایوب خان نے کہا ہے کہ حکومت انرجی مکس میں 18 سے 20 ہزار میگاواٹ آبی توانائی شامل کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے، 2030 تک 70 فیصد بجلی متبادل ذرائع سے حاصل کی جائے گی۔

سرکاری ٹی وی کے مطابق اسلام آباد میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر عمر ایوب خان کا کہنا تھا کہ آبی وسائل میں سرمایہ کاری کے ذریعے مجموعی ملکی پیداوار (جی ڈی پی) میں ایک فیصد اضافہ ہوگا،تربیلا، منگلا، غازی بروتھا اور خانپورڈیم کے علاوہ نہروں کے کنارے تیرتے شمسی پینلز (فلوٹنگ سولر پینلز)نصب کیے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں غذائی تحفظ اور غذائی تحفظ کو سنجیدگی سے لینا ہو گا، تربیلا اور منگلا ڈیم کے بعد آبی ذخائر کی تعمیر کا کام روک دیا گیا، 60 کی دہائی کے بعد کوئی بڑا ڈیم ملک میں نہیں بنایا گیا،ہمارے آبی ذخائر تیزی سے کم ہو رہے ہیں، ہمیں پانی کے استعمال میں انتہائی احتیاط برتنا ہو گی، زرعی شعبے میں بہترین اور جدید ٹیکنالوجی متعارف کرائیں گے۔اُنہوں نے کہا کہ متبادل توانائی پالیسی صوبوں کے اتفاق رائے سے بنائی گئی، متبادل توانائی ترقی (اے ای ڈی بی) بورڈ میں متبادل توانائی پالیسی پر سندھ نے پالیسی کی حمایت کی تھی، موسمیاتی تبدیلی اکیلے پاکستان کا نہیں ساری دنیا کا مسئلہ ہے،اگر بھارت نے سندھ طاس معاہدے کی خلاف ورزی کی تو بھرپور جواب دیا جائیگا،پاکستان ہر سطح پر اپنی خودمختاری برقرار رکھے گا، بھارت پہلے ہی پاکستان پر جارحیت کا مزہ چکھ چکا ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ کشمیر میں بھارتی ظلم وستم ناقابل برداشت ہیں،دنیا کو مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے ظلم و ستم کا نوٹس لینا چاہیے۔وزیر توانائی کا کہنا تھا کہ گردشی قرضہ اس وقت 850 ارب روپے ہے۔ گردشی قرضے کی ماہانہ رفتار 39 ارب سے کم ہوکر دس ارب ماہانہ رہ گئی ہے، گزشتہ سردیوں میں صارفین سے وصول کئے گئے اضافی گیس بلوں کا کیس سپریم کورٹ میں ہے۔ چاہتے ہیں اضافی گیس بل صارفین کو واپس کئے جائیں۔

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.