زرداری کی طبی بنیادوں پر ضمانت کیلئے آج درخواست دینگے

پاکستان
11
0
sample-ad

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، ایجنسیاں ) چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ آصف علی زرداری کی طبیعت بدستور ناساز ہے ،حکومتی ڈاکٹروں پر اعتماد نہیں، آصفہ بھٹو نے والد کو ضمانت کے لیے قائل کر لیا، اپنے والد آصف علی زرداری کی طبی بنیادوں پر ضمانت کے لیے آج منگل کو درخواست دائر کر یں گے ، آئینی ترمیم کے لیے ہمار ا کر دار مثبت مگر حکومت غیر سنجیدہ ہے ۔ پہلے نیا وزیراعظم آئے گا ،پھر آئینی ترمیم ہو گی، وزیراعظم کے رویے سے لگتا ہے وہ قانون سازی کے لیے اتفاق رائے نہیں چاہتے ، (ن) لیگ نے اپوزیشن سے مشاورت کے بعدچیف الیکشن کمشنر کے لیے 3 نام بھجوائے ، آرمی چیف کی تعیناتی سے متعلق سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلے کے منتظر ہیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنی بہنوں آصفہ، بختاور اور دیگر پارٹی کے رہنماؤں کے ہمراہ پمز ہسپتال میں والد سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ بلاول نے کہا آصف زرداری کی طبیعت تشویشناک ہے ، ہماری جانب سے ذاتی معا لجین کا وقت پر انتظام نہیں ہو سکا اور اس دوران سرکاری ڈاکٹرز کی جانب سے سابق صدر کی مختلف بیماریاں تشخیص کی گئی ہیں ۔ سرکاری ڈاکٹرزقابل ضرور ہوں گے مگر ہمیں ان پر زیادہ اعتبار نہیں۔ سرکاری ڈاکٹرز آصف زرداری کے دل کی بند شریانوں کے حوالے سے تفصیلی معائنہ کرنا چاہتے ہیں۔ آصفہ بھٹو نے سابق صدر کو ضمانت کے لیے منا لیا ہے اور اب فیصلہ ہوا ہے کہ آج ضمانت کے لیے درخواست دائر کریں گے ۔ اُمید ہے سابق صدر کو طبی بنیادوں پر جلد ضمانت مل جائے گی، پھر سرکاری ڈاکٹرز کے بتائے گئے طریقے پر عمل کر کے معاملے کو آگے بڑھا ئیں گے ۔ بلاول بھٹو نے بتایا آصف زرداری کے ساتھ ملکی سیاسی حالات پر تفصیلی گفتگو ہوئی۔ پیپلزپارٹی اپنے موقف پر قائم ہے ، اپنے نظریہ پر کمپرومائز نہیں کرے گی۔انہوں نے کہا پیپلزپارٹی نے فیصلہ کیا ہے 27دسمبر کو بے نظیر بھٹو کی برسی لیاقت باغ راولپنڈی میں منائی جائے گی، جہاں سے ایک بار پھر جدوجہد کو تیز کریں گے ، ہم سمجھتے ہیں طاقت کا سرچشمہ صرف اور صرف عوام ہیں ۔ ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹونے کہا (ن) لیگ نے اپوزیشن سے مشاورت کے بعدچیف الیکشن کمشنر کے لیے 3 نام بھجوائے ۔ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع سے متعلق چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا حکومت3 ماہ میں ایک نوٹیفکیشن نہ بنا سکی، مجھے نہیں لگتا حکومت 6 ماہ میں قانون سازی پراپوزیشن کواعتماد میں لے سکے گی۔ وزیراعظم اپوزیشن رہنماؤں پر دبا ؤ ڈالنا چاہتے ہیں، انہوں نے پہلے بھی دوسرے معاملات میں اتفاق رائے پیدا نہیں کیا اور ہر معاملے میں غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہیں۔ بلاول نے کہا سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلے کے بعد آئینی ترمیم کے لیے پیپلزپارٹی کا رول مثبت ہو گا، ہم وزیراعظم سے کوئی اُمید نہیں رکھ سکتے ، ان کے کردار کی وجہ سے تمام اداروں پر منفی اثر پڑا، وہ صرف تحریک انصاف کے لیڈر ہیں ملک کے نہیں۔انہوں نے کہا فارن فنڈنگ کا کیس تحریک انصاف کے خلاف ہے ، افسوس اس کا ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں آیا۔ دوسری جانب پیپلزپارٹی کے خلاف جھوٹا کیس بنایا گیا، ہم نے اپنی جماعت کی فنڈنگ کے حوالے سے کچھ نہیں چھپایا، ہمارے فارن فنڈنگ کیس میں کچھ بھی نہیں ہے ۔ اس سے قبل پمز میں بلاول، بختاور اور آصفہ نے اپنے والد آصف زرداری کی عیادت کی۔ بلاول اپنی بہنوں بختاور اور آصفہ کے ہمراہ گھنٹے سے زیادہ اپنے والد کے پاس رہے اور مختلف ایشوز پر تبادلۂ خیال کیا۔ این این آئی کے مطابق سابق صدر آصف زرداری کی تشویشناک صحت کے پیش نظر سرکاری ڈاکٹروں نے ان کے دل کے آپریشن کی سفارش کی ہے ۔ ذرائع کے مطابق ذاتی معالجین کے بغیر سرکاری ڈاکٹروں کی جانب سے آپریشن کی سفارش کے معاملے پر خاندان کے افراد جلد مشاورت کریں گے ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.