Warning: Use of undefined constant REQUEST_URI - assumed 'REQUEST_URI' (this will throw an Error in a future version of PHP) in /home/rcnews/public_html/wp-content/themes/jannah/functions.php on line 74
پاکستان کے محفوظ ملک ہونے کا پیغام عام کرنے آئے ہیں, کمار سنگاکار - آرسی ویب نیوز
کھیل

پاکستان کے محفوظ ملک ہونے کا پیغام عام کرنے آئے ہیں, کمار سنگاکار

ایم سی سی کی ٹیم سات روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئی،سخت حفاظتی انتظامات میں ہوٹل اور پھر گراؤنڈ منتقلی،مہمان کھلاڑیو ں کا بھرپورپریکٹس سیشن، آج لاہور قلندرز سے مقابلہ ایک مرتبہ پھر پاکستان آنا اور کرکٹ کھیلنا اچھا لگ رہا ہے ،عالمی کرکٹ میں اس ملک کی اپنی ایک اہمیت ہے اور یہاں کھیل کی مکمل بحالی ہمارا بھی اہم مقصد ہے ،مہمان کپتان

لاہور(اسپورٹس ڈیسک)ایم سی سی کی کرکٹ ٹیم سات روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئی جس کے کپتان کمار سنگاکارا کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان کے محفوظ ملک ہونے کا پیغام عام کرنے آئے ہیں،مہمان سائیڈ کو سخت حفاظتی انتظامات میں ہوٹل اور پھر گراؤنڈ منتقل کیا گیا جہاں کھلاڑیوں نے بھرپور پریکٹس سیشن کے دوران آج لاہور قلندرز کیخلاف پہلے میچ کیلئے اپنے جوہروں کو نکھارا،ایم سی سی کے موجودہ صدر کمار سنگاکارا نے واضح کیا کہ انہیں ایک بار پھر پاکستان آنا اور کرکٹ کھیلنا بہت اچھا لگ رہا ہے اور چونکہ عالمی کرکٹ میں اس ملک کی اپنی ایک اہمیت ہے لہٰذا یہاں کھیل کی مکمل بحالی ان کابھی اہم مقصد ہے ۔تفصیلات کے مطابق تاریخ ساز کلب ایم سی سی کا اسکواڈ سابق سری لنکن وکٹ کیپر بیٹسمین کمار سنگاکارا کی زیر قیادت پاکستان پہنچ گیا اور لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ایئرپورٹ پر چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان سمیت دیگر بورڈ حکام نے مہمان ٹیم کا استقبال کیا جو 48برس کے طویل عرصے بعد پاکستان پہنچی ہے اور سات روزہ دورے میں تین ٹی ٹوئنٹی اور ایک ون ڈے میچ کھیلے گی۔مہمان ٹیم کو سخت سیکیورٹی حصار میں ہوٹل اور پھر قذافی اسٹیڈیم منتقل کیا گیا جہاں کھلاڑیوں نے آج لاہور قلندرز کیخلاف دورے کے پہلے میچ کیلئے بھرپور پریکٹس سیشن کیا یاد رہے کہ مارچ 2009ء میں پاکستان کے دورے پر آنے والی سری لنکن ٹیم پر دہشت گردوں کے حملے نے ملک میں دس سال سے زائد عرصے تک انٹرنیشنل کرکٹ موقوف رکھی لیکن وقت کے ساتھ حالات کی بہتری نے غیر ملکی ٹیموں کی پاکستان آمد کا سلسلہ شروع ہو گیااور ایم سی سی کا حالیہ دورہ پاکستان بھی ملک میں بین الاقوامی کرکٹ کے اجرائکا حصہ ہے جس کی قیادت کلب کے صدر کمار سنگاکارا کر رہے ہیںجو اس سری لنکن ٹیم میں بھی شامل تھے جس پر دہشت گردوں نے حملہ کیا تھا۔ایم سی سی کے کپتان اور کلب کے موجودہ صدر کمارسنگاکارا کا چیف ایگزیکٹو پی سی بی وسیم خان کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ وہ پہلی مرتبہ 2000ء میں پاکستان آئے تھے تو اس وقت وسیم اکرم،وقار یونس اور انضمام الحق جیسے صف اول کے کھلاڑی پاکستانی ٹیم کا حصہ تھے اور یہاں کرکٹ کھیلنا ایک خوشگوار تجربہ ہوتا تھا۔انہوں نے پاکستان کی زبردست مہمان نوازی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ یہاں کا کھانا، لوگ، تہذیب اور ثقافت کے علاوہ ماحول انہیں ہمیشہ سے پسند ہے اور یہی وجہ ہے کہ ایک مرتبہ پھر یہاں آنا اور کرکٹ کھیلنا بہت اچھا لگ رہا ہے ۔کمار سنگاکارا کا کہنا تھا کہ ماضی میں ان کیلئے دورہ پاکستان یادگار کا درجہ رکھتا تھا اور کرکٹ کیریئر کے دوران سری لنکن ٹیم جب بھی پاکستان آئی تو وہ بھی اس میں شامل ہوتے تھے اور درحقیقت پاکستان ماضی میں کرکٹ کے اعتبار سے بہترین مقامات میں سے ایک رہ چکا ہے جہاں تواتر کے ساتھ انٹرنیشنل ٹیمیں دورے پر آتی تھیں اور انہیں پوری امید ہے کہ یہ ایک مرتبہ پھر کرکٹ کیلئے بہترین مقام بن جائے گا اور لوگ یہاں تسلسل کے ساتھ بین الاقوامی کرکٹ کا لطف اٹھا سکیں گے ۔سابق سری لنکن کپتان نے ماضی کے پردوں میں جھانکتے ہوئے کہا کہ انہیں اچھی طرح یاد ہے کہ جب 1996ء میں سری لنکا کو مدد کی ضرورت تھی تو اس وقت دنیائے کرکٹ نے متحد ہو کر ان کی مدد کی تھی اور سری لنکا میں کرکٹ کھیل کر دنیا بھر میں یہ پیغام پہنچایا تھا کہ یہ ملک کرکٹ کھیلنے کیلئے مکمل محفوظ ہے اور وہ بھی اس بار پاکستان آئے ہیں تو اس کا واحد مقصد یہ پیغام عام کرنا ہے کہ یہ ملک کرکٹ کیلئے مکمل محفوظ اور پرامن ہے اور توقع ہے کہ ان کی یہ کوشش پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی سرگرمیاں مکمل طور پر بحال کرنے میں معاون ثابت ہو گی۔کمار سنگاکارا نے پاکستانی سرزمین پر کرکٹ میچوں کے انعقاد کو اہم قرار دیتے ہوئے واضح کیا کہ اگر کسی ملک میں طویل عرصے تک انٹرنیشنل میچوں کا انعقاد نہ ہو تو ملکی شائقین میں کھیل کی چاہ ختم ہونے کا خطرہ پیدا ہو جاتا ہے جبکہ شائقین کا اپنے کھلاڑیوں کو نگاہوں کے سامنے کھیلتے ہوئے دیکھنا بھی ضروری ہے جو بھرپور حوصلہ افزائی کے ساتھ عالمی سطح پر کھیل کی ترقی کیلئے معاون ثابت ہوتے ہیں۔ایم سی سی کے صدر نے اعتراف کیا کہ پاکستان عالمی کرکٹ میں بہت زیادہ اہمیت کا حامل ملک ہے اور ایم سی سی نے اسی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے اس ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کیلئے اپنا موثر کردار ادا کرنے کی کوشش کی ہے تاکہ دیگر عالمی ٹیموں کی بھی پاکستان آنے کیلئے حوصلہ افزائی ممکن ہو سکے ۔سابق سری لنکن کپتان کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی اس وقت دنیا بھر میں ایک مسئلہ بنی ہوئی ہے لیکن پاکستان نے گزشتہ چند برسوں میں بہترین اقدامات کی بدولت فول پروف حفاظتی انتظامات یقینی بناتے ہوئے دنیا کو مثبت پیغام دیا جس کے باعث غیر ملکی ٹیموں اور کھلاڑیوں کا اعتماد بحال ہوا جس میں بتدریج بہتری آرہی ہے ۔کمار سنگاکارا کا کہنا تھا کہ جتنی زیادہ غیر ملکی ٹیمیں پاکستان کے دورے پر آئیں گی اتنا ہی دنیا کے دیگر ممالک کو یہ مضبوط پیغام جائے گا کہ پاکستان کرکٹ کیلئے محفوظ ہے جسے نظر انداز کرنا ممکن نہیں ہوگا۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
%d bloggers like this: