تازہ خبر

نواز شریف کی بروقت انجیو گرافی نہ کرانے پر جان کو خطرہ ہے

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے روبرو چودھری شوگرملز کیس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی تازہ ترین میڈیکل رپورٹ پیش کردی گئی،دو صفحات پر مشتمل اس رپورٹ میں نواز شریف کی جلد ازجلد انجیوگرافی کرانے کی سفارش کی گئی ہے، اگر نوازشریف کی کورونری انجیو گرافی بروقت نہ کروائی گئی توان کی جان کو خطرہ ہے،نواز شریف کے دل کو خون کی روانی غیر مسلسل ہے، غیر متوازن پلیٹ لیٹس کی وجہ سے نواز شریف کی حالت خطرے سے دوچار ہوسکتی ہے،نوازشریف کے طبی معائنہ کیلئے کنسلٹنٹ ہماٹالوجسٹ ڈاکٹر کاظمی سے 24فروری کا وقت لیا گیا ہے۔

رپورٹ میں مزیدکہا گیا ہے کہ نوازشریف کو علاج کیلئے برطانیہ میں طبی ماہرین کی زیرنگرانی رہنا چاہیے،میاں نواز شریف کے وکیل امجد پرویز نے ان کی حاضری سے استثنیٰ کی درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ نواز شریف ڈاکٹرز کی ہدایت کے بعد ہی سفر کر سکیں گے،احتساب عدالت نے اس رپورٹ کی بنیاد پر سابق وزیراعظم کی حاضری معافی کی درخواست منظور کرلی جبکہ ان کے بھتیجے یوسف عباس کے جوڈیشل ریمانڈ میں مزید 14روزہ کے لئے توسیع کردی،اس کیس میں عدالت پہلے ہی مریم نواز کو ریفرنس دائر ہونے تک حاضری سے استثنیٰ دے چکی ہے،اس کیس کی مزید سماعت کے لئے28فروری کی تاریخ مقررکی گئی ہے۔

امجد پرویز نے صحافیوں کو بتایا کہ نوازشریف کی پاکستان ہائی کمشن سے تصدیق شدہ میڈیکل رپورٹ کو لاہور ہائی کورٹ میں داخل کیا جائے گا۔سابق وزیراعظم نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان نے ایک خط کے ذریعے پنجاب حکومت پر واضح کر دیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف اپنی بیماری کے باعث فی الحال پاکستان واپس نہیں آ سکیں گے۔

ان کا یہ بھی کہنا تھاکہ نواز شریف کا رواں ماہ فروری کے آخری ہفتے میں مختلف میڈیکل ٹیسٹ ہوں گے جبکہ اس حوالے سے صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا ہے کہ بھیجی گئی نواز شریف کی میڈیکل رپورٹ کے بارے میں محکمہ داخلہ ہی کچھ بتا سکتا ہے۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button
Close
%d bloggers like this: