3

جعلی اکاؤنٹس کیس: اسلم مسعود کا 7 روزہ راہداری ریمانڈ منظور

اسلام آباد: جعلی اکائونٹس کیس کے اہم ملزم اسلم مسعود کو سات روزہ راہداری ریمانڈ پر ایف آئی اے کے حوالے کر دیا گیا۔ بیمار ہونے کے باعث ملزم کو اسٹریچر پر کمرہ عدالت لایا گیا۔
جعلی اکائونٹس کیس کی تفیتش کرنے والی ایف آئی اے کی ٹیم نے ملزم اسلم مسعود کو عدالتی وقت ختم ہونے کے بعد اسلام آباد کے سینئر سول جج عامر عزیز کی عدالت میں پیش کیا۔ ملزم کی پیشی کے وقت سخت سیکیورٹی انتظامات کئے گئے اور کچہری کے تمام دروازے بھی بند کر دیئے گئے۔

ملزم اسلم مسعود کو ایمبولنس میں اسپتال سے عدالت لایا گیا تھا۔ تفتیشی افسر محمد علی ابڑو نے عدالت کو بتایا کہ ملزم اسلم مسعود کو انٹرپول کی مدد سے سعودی عرب سے گرفتار کرکے وطن واپس لایا گیا۔ ملزم کو گزشتہ رات ایئرپورٹ سے حراست میں لیا گیا اور اب اسے کراچی منتقل کرنا ہے، اس لیے راہداری ریمانڈ دیا جائے۔

عدالت نے ایف آئی اے کی استدعا منظور کرتے ہوئے ملزم اسلم مسعود کو سولہ فروری تک راہداری ریمانڈ پر ایف آئی اے کی تحویل میں دے دیا۔ اور حکم دیا کہ ملزم کو ریمانڈ مکمل ہونے پر کراچی کی متعلقہ ٹرائل کورٹ میں پیش کیا جائے۔ ریمانڈ ملنے پر ملزم کو انتہائی سخت سیکیورٹی میں عدالت سے واپس لے جایا گیا۔

یاد رہے کہ جعلی بینک اکاؤنٹس کے الزام میں انتہائی مطلوب اسلم مسعود سعودی عرب سے پاکستان پہنچے تھے کہ انہیں ایف آئی اے نے ایئرپورٹ سے ہی گرفتار کر لیا۔ اسلم مسعود کو انٹر پول نے پاکستان لانے میں مدد فراہم کی، انہیں اکتوبر 2018 میں لندن سے جدہ جاتے وقت انٹر پول نے گرفتار کر لیا تھا۔
اسلم مسعود سابق صدر آصف علی زرداری کے اکاؤنٹنٹ بھی رہ چکے ہیں اور ان پر 107 جعلی بینک اکاؤنٹس سے 54 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کا الزام ہے۔ اسلم مسعود اومنی گروپ کے چیف فنانشل افسر ہیں۔ گزشتہ دنوں پاکستان آنے کی مشروط رضا مندی ظاہر کی تھی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں