10

پانی کے بھاری چارجز ماہانہ فکس کرنیکا فیصلہ واپس لیں:لاہور چیمبر

لاہور(کامرس رپورٹر)فکس چارجز صنعتوں کیلئے مسائل پیدا کریں گے ، سینئر نائب صدار خواجہ شہزاد ناصر
لاہور چیمبر کے سینئر نائب صدر خواجہ شہزاد ناصر نے واسا پر زور دیا ہے کہ وہ صنعتوں کیلئے پانی کے بھاری چارجز ماہانہ بنیادوں پر فکس کرنے کا فیصلہ فوری طور پر واپس لے کیونکہ صنعتیں اس کی متحمل نہیں ہوسکتیں۔ لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل ایک نوٹیفکیشن کے ذریعے صنعتوں کیلئے ایک کیوسک کے ٹیوب ویل کی تنصیب پر ایک لاکھ ماہانہ جبکہ آدھے کیوسک کے ٹیوب ویل کی تنصیب پر پچاس ہزار روپے ماہانہ چارجز فکس کئے ہیں،خواہ صنعتیں پانی استعمال کریں یا نہ کریں جبکہ بل کی دیر سے ادائیگی کی صورت میں صنعتکاروں کو دس فیصد سرچارج بھی ادا کرنا پڑے گا۔ خواجہ شہزاد ناصر نے کہا کہ صنعتی شعبہ کو پہلے ہی زیادہ پیداواری لاگت جیسے بڑے مسئلے کا سامنا ہے ، ایسے میں زمینی حقائق کو مدنظر رکھے بغیر پانی کے ماہانہ بھاری چارجز فکس کردینا مزید مشکلات پیدا کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ واسا صنعتوں کی مشکلات میں کمی لانے کیلئے پانی کے چارجز ماہانہ بنیادوں پر فکس کرنے کا فیصلہ فوری طور پر واپس لے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں