21

خوشاب روڈ سمیت دیگر اہم شاہراہوں پر ٹریفک جام رہنا معمول

سرگودھا(سٹاف رپورٹر)ایمبولینس اکثر راستہ تلاش کرتی نظر آتی ہے ،ٹریفک پولیس میں افرادی قوت کی کمی دور نہ ہونے سے شہریوں کی مشکلا ت میں اضافہ نشاندہی کے باوجود ٹریفک کنٹرول کرنے کیلئے کوئی حکمت عملی نظر نہیں آرہی ،توجہ دی جائے :شہریوں کا ڈی سی اور ڈی پی اوسے مطالبہ
پارکنگ کا خاتمہ نہ ہونے اور ٹریفک پولیس میں افرادی قوت کی کمی کے باعث خوشاب روڈ سمیت دیگر اہم شاہراہیں گھنٹوں ٹریفک بلاک رہنے لگی۔ ایمبولینس سمیت دیگر ایمر جنسی گاڑیاں پھنسنے کے واقعات معمول بن گئے ہیں۔ شہرکی مرکزی اور ذیلی شاہراؤں پر جہاں پارکنگ کے مسائل پر قابو نہ پایا جا سکا وہاں ٹریفک پولیس میں افرادی قوت کی کمی کو دور نہ ہونے کی وجہ سے شہریوں کی مشکلا ت بڑھتی جا رہی ہیں، بالخصوص خوشاب روڈ ،فاطمہ جناح روڈ، کوٹ فرید روڈ،یونیورسٹی روڈ پر ٹریفک اکثر بلاک نظر آتی ہے ، طویل شاہراہیں ہونے کے باوجود اکا دکا ٹریفک اہلکار سڑک پر موجود ہوتے ہیں سکول کے اوقات میں خصوصاً ٹریفک گھنٹوں بلاک رہتی ہے اس اہم شاہراہ پر 2 اہم سرکاری ہسپتالوں کی موجودگی کی وجہ سے ایمبولینس کا گزرنا بھی محال ہے متعدد بار نشاندہی کے باوجود تا حال ٹریفک کنٹرول کرنے کیلئے کوئی مناسب حکمت عملی نظر نہیں آرہی ہے شہریوں نے ڈی سی اور ڈی پی او کو اس اہم مسئلہ کے فوری حل کی ضرورت پر زور دیا ہے ۔علاوہ زیں شہر بھر میں ٹریفک کا جام رہنا معمول بن گیا ہے جس سے سکولز ، کالجز اور دفاتر میں جانے والے لوگوں میں غم وغصہ پایا جا رہا ہے ۔ انجمن تاجران جنرل بس سٹینڈ کے جنرل سیکرٹری ملک ابوبکر اعوان نے کہا کہ ٹریفک پولیس صرف چالان کرنے پر لگی رہتی ہے اور شہر بھر کے اہم شاہراہوں ، خوشاب روڈ ، یونیورسٹی روڈ ،سیٹلائٹ ٹاؤن چوک، فاطمہ جناح روڈ اور اندرون شہر کے بازار کچہری بازار، شاہین چوک، سٹی روڈ ، بلاک12چوک ، کارخانہ بازار اور نوری گیٹ سمیت اہم شاہراہوں پر ٹریفک جام ہونے سے شہریوں کو شدید پریشانی کا سامنا رہتا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں