دینا کی خبریں

صومالیہ میں کار بم دھماکا، 20افراد ہلاک، 50زخمی

موغادیشو (خبر ایجنسیاں) صومالیہ میں کار بم دھماکے میں 20 افراد ہلاک، 50 زخمی ہو گئے ، حملہ ایک کار کے ذریعے کیا گیا جہاں لوگوں کی بڑی تعداد مارکیٹ میں موجود تھی، دھماکا شدت پسند تنظیم الشباب کے حکومت کے خلاف جنگ جاری رکھنے کے اعلان کے چند گھنٹے بعد ہوا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق افریقی ملک صومالیہ کے دارالحکومت موغا دیشو میں ہونے والے کار بم دھماکے میں 20 افراد ہلاک اور 50زخمی ہو گئے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق مقامی حکام نے بتایا کہ دھماکا موغا دیشو کے ایک معروف کاروباری مرکز کے باہر ہوا۔ ڈسٹرکٹ کمشنر احمد عبداللہ نے بتایا کہ دھماکا ایک کار کے ذریعے اس وقت کیا گیا جب لوگوں کی بڑی تعداد مارکیٹ میں موجود تھی۔ دھماکے میں زخمی ہونے والے ایک قصائی نے بتایا کہ کوئی اپنی گاڑی کپڑوں کی دکان کے سامنے کھڑی کر کے گیا تھا جس کے تھوڑے ہی دیر بعد دھماکا ہوگیا۔ واضح رہے کہ صومالیہ میں 8 فروری کو محمد عبداللہ محمد صدر منتخب ہوئے تھے اور ان کے منتخب ہونے کے بعد صومالیہ میں ہونے والا یہ پہلا بڑا حملہ ہے ۔ یہ دھماکا صومالیہ میں سرگرم شدت پسند تنظیم الشباب کی جانب سے نو منتخب صدر کو لادین قرار دیتے ہوئے ان کی حکومت کے خلاف جنگ جاری رکھنے کے اعلان کے چند گھنٹے بعد ہوا۔

سعودی عرب اور اسرائیل کی ایران پر شدید تنقید

میونخ (دنیا ڈیسک) سعودی وزیر خارجہ نے کہا ہے کہ دنیا بھر میں دہشت گردی کا مرکزی اسپانسر ایران ہے جبکہ اسرائیلی وزیر دفاع نے کہا ہے کہ مشرق وسطیٰ میں ایران کا حتمی ہدف سعودی عرب کو کمزور کرنا ہے ۔ تفصیلات کے مطابق جرمنی میں ہونے والی میونخ سیکیورٹی کانفرنس کے دوران اسرائیل اور سعودی عرب نے ایران کی شدید مخالفت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایران ملک مشرق وسطیٰ میں عدم استحکام پیدا کر رہا ہے ۔ اسرائیلی وزیر دفاع نے کہا کہ مشرق وسطیٰ میں ایران کا حتمی ہدف سعودی عرب کو کمزور کرنا ہے ، ایران کو خطے میں انتہا پسند عناصر کو ختم کرنے کے لیے سعودی عرب کے ساتھ مذاکرات کرنے چاہئیں، ایران کا مقصد مشرق وسطیٰ کے ہر ملک میں استحکام کو کمزور کرنا ہے اور آخر کار اس کی آخری منزل سعودی عرب ہے ، اصل تقسیم مسلمانوں اور یہودیوں میں نہیں بلکہ اعتدال پسندوں اور بنیاد پرستوں میں ہے ۔ اسی سیکیورٹی کانفرنس میں سعودی وزیر خارجہ عادل بن الجبیر نے بھی ایران پر شدید تنقید کی ۔ ان کا الزام عائد کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ایران دنیا بھر میں دہشت گردی کا مرکزی اسپانسر ہے ، ایران مشرق وسطیٰ میں عدم استحکام پیدا کر رہا ہے اور وہ انہیں تباہ کرنا چاہتا ہے ، مشرق وسطیٰ میں امن ختم کرنے کے لیے پرعزم ہے اور جب تک ایران اپنے رویے تبدیل نہیں کرے گا تب تک اس طرح کے ملک کے ساتھ نمٹنا بہت مشکل ہے ، ایران شام اور خطے کے متعدد تشدد گروہوں کے علاوہ حوثی باغیوں کی مالی امداد جاری رکھے ہوئے ہے ۔ انہوں نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا کہ ایرانی اقدامات کو روکنے کے لیے واضح ریڈ لائنز کی ضرورت ہے ۔

ٹرمپ سفری پابندیوں سے متعلق ’’موثر‘‘ حکم نامہ جاری کرینگے

میونخ (خبر ایجنسیاں) امریکا کی ہوم لینڈ سیکیورٹی کے وزیر جان کیلی نے کہا ہے کہ صدر ٹرمپ جلد ہی سات اکثریتی مسلم ممالک کے تارکین وطن سے متعلق جاری کردہ صدراتی حکم نامے کو ایک موثر شکل میں جاری کریں گے ، تاہم اس پر بہتر انداز میں عمل درآمد کیا جائے گا اور یہ اس بدنظمی کا سبب نہیں بنے گا جو قبل ازیں غیر ملکیوں کے امریکا میں داخلے پر پابندی عائد کرنے کے بعد دیکھی گئی ۔ جرمنی کے شہر میونخ میں سالانہ سیکیورٹی کانفرنس کے موقع پر انسداد دہشت گردی سے متعلق ہونے والے ایک مباحثے میں گفتگو کرتے ہوئے کیلی نے کہا کہ سفری پابندی سے متعلق نیا حکم نامہ گرین کارڈ کے حامل غیر ملکیوں کو امریکا میں دوبارہ داخل ہونے سے نہیں روکے گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ جب یہ حکم نامہ موثر ہو گا تو اس وقت امریکا میں داخل ہونے کے لیے محو سفر افراد پر بھی یہ اثر انداز نہیں ہوگا۔ کیلی نے کہا کہ ٹرمپ اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ اس سفری پابندی کے دوران غیر ممالک سے امریکا آنے والے ہمارے ہوائی اڈوں پر نہ پھنس جائیں۔ قبل ازیں سفری پابندیوں سے متعلق27 جنوری کو جاری ہونے والے صدارتی حکم نامے کو امریکا کی عدالتوں نے معطل کر دیا تھا۔ وائٹ ہاؤس کے عہدیداروں کا کہنا تھا کہ یہ ایک سیکیورٹی اقدام تھا جس کا مقصد شدت پسندوں کے حملوں کا تدارک کرنا تھا ۔ ٹرمپ کے انتظامی حکم کے تحت ایران، عراق، لیبیا، صومالیہ، سوڈان، شام اور یمن کے شہریوں پر امریکا میں داخلے پر 90 روز کی پابندی عائد کر دی گئی تھی۔

About

View all posts by

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *