نیا کی خبریں

دہشت گردی سرحدوں کو تسلیم نہیں کرتی ، کوئی خطہ محفوظ نہیں رہیگا:افغان صدر

کابل (آئی این پی) افغانستان نے دھمکی دی ہے کہ اگر پاکستان نے سرحد پار سے گولہ باری کا سلسلہ بند نہ کیا تو اسے منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔ دوسری طرف افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ دہشت گردی سرحدوں کو تسلیم نہیں کرتی۔ کوئی بھی خطہ محفوظ نہ رہے گا۔ جرمنی کے شہر میونخ میں سیکیورٹی کانفرنس سے خطاب میں اشرف غنی نے کہا کہ جو ممالک دہشت گردی کو ریاستی پالیسی کے طور پر استعمال کرتے ہیں انہیں تنہا کردینا چاہیے ۔ دہشت گردی سرحدوں کو تسلیم نہیں کرتی۔ اگر قابو نہ پایا گیا تو کوئی بھی اس لعنت سے محفوظ نہیں رہے گا ۔ افغانستان میں جاری لڑائی خانہ جنگی نہیں بلکہ ریاستوں کے مابین غیر اعلانیہ جنگ ہے ۔ افغان وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ سفارت کاری کام نہ آئے تو اٖفغانستان جوابی کارروائی کا حق محفوظ رکھتا ہے ۔ وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا کہ اگر پاکستان نے گولہ باری نہ روکی تو اس کے خلاف بھرپور طاقت کا مظاہرہ کیا جائے گا ۔ وزارت خارجہ میں اسٹریٹجک اسٹڈیز کے ڈائریکٹر فرامارز تامنا کا کہنا تھا کہ ہمیں امید ہے کہ پاکستان سے حملے بند ہو جائیں گے اور دو طرفہ تعلقات معمول پر آجائیں گے ، اگر ایسا نہ ہوا تو افغانستان خاموش نہیں بیٹھے گا۔دریں اثناء اقوام متحدہ نے افغانستان کے صوبے پکتیکا میں بم دھماکے کی مذمت کی ہے ، دھماکے میں بارہ افراد ہلاک ہوئے تھے ، جن میں 8 بچے بھی شامل تھے جو اسکول سے واپس آ رہے تھے ، واقعہ اس وقت پیش آیا جب بچوں کی گاڑی سڑک پر نصب بم سے ٹکرائی تھی۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق اقوامِ متحدہ نے افغانستان کے شورش زدہ صوبے پکتیکا میں سڑک کے کنارے نصب ایک بم کے پھٹنے سے بارہ افغان باشندوں کی ہلاکت کی مذمت کی ہے ۔ ان افغان باشندوں میں آٹھ بچے بھی شامل ہیں، جو اسکول سے واپس آ رہے تھے ۔ اقوامِ متحدہ کے مطابق یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب ان بچوں کی گاڑی سڑک پر نصب دیسی ساختہ بم سے ٹکرائی۔ اس حادثے میں چار افراد زخمی بھی ہوئے ۔ پکتیکا صوبے کے حکام کی جانب سے ابھی تک اس واقعہ پر کوئی ردِ عمل سامنے نہیں آیا ہے ۔امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس نے افغانستان کا پہلا دورہ منسوخ کردیا۔ذرائع کے مطابق ابو ظہبی میں موجود امریکی وزیر دفاع کا دورہ افغانستان موسم کی خرابی کی وجہ سے منسوخ ہوا۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ افغانستان میں نئی فوجی حکمت عملی کا اعلان مقامی امریکی کمانڈر سے مشاورت کے بعد کرونگا۔انہوں نے کہا کہ میں نے ا توار کو کئی گھنٹے تک کابل میں جنرل نکلسن سے ویڈیولنک کے ذریعے بات چیت کی ہے ۔

امریکا کے ساتھ باہمی احترام پر مبنی تعلقات چاہتے ہیں، روسی وزیر خارجہ

میونخ(این این آئی)روسی وزیر خارجہ سرگئی لاؤروف نے کہا ہے کہ امریکا کے ساتھ باہمی احترام پر مبنی تعلقات چاہتے ہیں ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق روسی وزیرِ خارجہ سرگئی لاؤروف نے کہا ہے کہ ماسکو حکومت امریکا کے ساتھ حقیقت پسندانہ تعلقات اْستوار کرنا چاہتی ہے ۔ غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سرگئی لاؤروف نے یہ بات میونخ سیکیورٹی کانفرنس میں اپنی تقریر میں کہی۔ سرگئی لاؤروف کا کہنا تھا کہ روس امریکا کے ساتھ حقیقت پسندانہ تعلقات، باہمی احترام اور عالمی استحکام کے لیے خصوصی ذمہ داری کی تفہیم چاہتا ہے ۔

 

About

View all posts by

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *